شاعری غزل

اس لیے دے دیا کنارا اسے …. نعیم رضا بھٹی

Spread the love

اس لیے دے دیا کنارا اسے
پتہ معلوم ہے ہمارا اسے

عین ممکن ہے بھاگتی آئے
میں نے یکدم اگر پکارا اسے

اس سے مخفی نہ تھا درِوصلت
روزنِ ہجر سے گزارا اسے

ہر کوئی اس کو دیکھ کر خوش تھا
اس قدر چاؤ سے سنوارا اسے

خود کو رکھا تھا نوکِ پا پہ رضا
اور بنایا تھا استعارہ اسے

نعیم رضا بھٹی



جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے