شاعری غزل

لب و رخسار کے تابع نہیں ہے …. آزاد حسین آزاد

لب و رخسار کے تابع نہیں ہے یہ دل اب یار کے تابع نہیں ہے طلب قوسین میں سمٹے تو کیسے ہوس پرکار کے تابع نہیں ہے میسر ہو تمہارا شوق جس کو وہ سر دیوار کے تابع نہیں ہے ہمیں بھی رزق ملتا ہی رہے گا خدا سرکار کے تابع نہیں ہے رہینِ وجد […]

شاعری غزل

میں اس لیے بھی گھڑے پر سوار تھا ہی نہیں  …. آزاد حسین آزاد

میں اس لیے بھی گھڑے پر سوار تھا ہی نہیں  کہ میرا کوئی بھی دریا کے پار تھا ہی نہیں یوں تازہ دم ہیں ترے اہلیان شوق اب کے سفر میں جیسےکہیں پر غبار تھا ہی نہیں میں اس جگہ بھی بڑی دیر تک رہا موجود  وہ جس جگہ پہ مرا انتظار تھا ہی نہیں […]